روزن 

لب کھلے ہیں

مگر دم گھٹتا ہے

saboohiahmad


روزن


میرے سینے میں اٹکتی ہوئی سانس

سسکتی ہوئی آس


لب کھلے ہیں

مگر دم گھٹتا ہے


تپتے ہوۓ جھلسے ہوۓ لفظ..

اٹک گئے ہیں کہیں سانس کے ساتھ


یہ جو سینے پہ دھری ہے تیرے نام کی سِل

میری سانسوں کو آزاد نہیں ہونے دیتی


دم اکھڑتا ہے تو ہر دم فقط ایک خیال

وہی ایک

میرا دمساز

میرا روزن

……..

(نامكمل)

View original post

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: